122

روہنگیا میں ریاستی جبر کے شکار مظلوم مسلمانوں کی مدد ونصرت عالم اسلام پر فرض ہے، عالمی علماء کونسل

مسلمان ممالک برما کے مظلوم مسلمانوں کو ظلم سے نجات دلانے کیلئے سفارتی ،سیاسی کوششیں تیز کریں، علماء مساجد کے منبرو محراب سے برما کے مسلمانوں کی مظلومیت کو اجاگر کریں ،ذرائع ابلاغ مظلوم روہنگیا مسلمانوں کی مدد و نصرت کیلئے اپنا کردار ادا کرے،الشیخ علی محی الدین القرہ داغی

دوحہ: عالمی علماء کونسل نے روہنگیا میں ریاستی جبر کے شکار مظلوم مسلمانوں کی مدد ونصرت کو عالم اسلام پر فرض قرار دیا ہے۔اطلاعات کے مطابق بین الاقوامی علماء کونسل کے سیکرٹری جنرل الشیخ علی محی الدین القرہ داغی نے کہا ہے کہ روہنگیا کے مسلمانوں کا مسئلہ محض مسلم ممالک کی ذمہ داری نہیں بلکہ یہ ایک انسانی مسئلہ ہے جسے عالمی سطح پر حل کرنے کیلئے پوری دنیا کو آگے آنا ہوگا۔
تاہم روہنگیا مسلمانوں پر ڈھائے جانیوالے مظالم بند کرانے کی پہلی ذمہ داری مسلمانوں پر عاید ہوتی ہے۔ برما کے مظلوم مسلمانوں کی مدد اور نصرت پوری مسلم امہ پر واجب ہے۔علماء کونسل نے تمام مسلمان ملکوں کی حکومتوں پر زور دیا ہے کہ وہ برما کے مظلوم مسلمانوں کو ظلم سے نجات دلانے کیلئے سفارتی اور سیاسی کوششیں تیز کریں۔ علماء مساجد کے منبرو محراب سے برما کے مسلمانوں کی مظلومیت کو اجاگر کریں اور ذرائع ابلاغ مظلوم روہنگیا مسلمانوں کی مدد و نصرت کے لیے اپنا کردار ادا کریں۔
الشیخ القرہ داغی نے کہا کہ اراکان میں مسلمانوں پر جو مظالم ڈھائے جا رہے ہیں وہ پوری دنیا کیلئے باعث عار ہیں۔ نہتے مسلمانوں کو بے دریغ تہہ تیغ کیا جا رہا ہے۔ ان کی بستیوں کو اجاڑا جا رہا ہے اور بڑی تعداد میں مسلمانوں کو ان کے گھروں سے نکال دیا گیا ہے۔ ایسے میں برما کے مظلوم مسلمان عالم اسلام سے مدد کی فریاد کرتے ہیں۔علماء کونسل نے کہا کہ برما میں بدھ مذہب کے متعصب انتہا پسندوں کے ظلم کا شکار مسلمانوں کے معاملے پر عالم اسلام کو آنکھیں بند کرکے بیٹھنے کا کوئی جواز نہیں۔ روہنگیا مسلمانوں کو تحفظ فراہم کرنا مسلم دنیا کی مذہبی اور انسانی ذمہ داری ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں